احمد فراز

احمد فراز 12 جنوری، 1931ء کو کوہاٹ میں پیدا ہوئے۔ ان کا اصل نام سید احمد شاہ علی تھا۔ اردو اور فارسی میں ایم اے کیا ۔ ایڈورڈ کالج ( پشاور ) میں تعلیم کے دوران ریڈیو پاکستان کے لیے فیچر لکھنے شروع کیے ۔ جب ان کا پہلا شعری مجموعہ تنہا تنہا  شائع ہوا تو وہ بی اے میں تھے ۔ تعلیم کی تکمیل کے بعد ریڈیو سے علیحد ہ ہو گئے اور یونیورسٹی میں لیکچرر شپ اختیار کر لی ۔ اسی ملازمت کے دوران ان کا دوسرا مجموعہ  درد آشوب چھپا جس کو پاکستان رائٹرزگلڈ کی جانب سےآدم جی ادبی ایوارڈعطا کیا گیا ۔ یونیورسٹی کی ملازمت کے بعد پاکستان نیشنل سینٹر (پشاور) کے ڈائریکٹر مقرر ہوۓ ۔ انہیں 1976 ء میں اکادمی ادبیات پاکستان کا پہلا سربراہ بنایا گیا ۔  احمد فراز نے 1988 ء میں آدم جی ادبی ایوارڈ اور 1990ء  میں اباسین ایوارڈ حاصل کیا ۔ 1988 ء میں انہیں بھارت میں فراق گورکھ پوری ایوارڈ سے نوازا گیا ۔ اکیڈمی آف اردو لٹریچر ( کینڈا ) نے بھی انہیں 1991ء میں ایوارڈ دیا ، جب کہ بھارت میں انہیں 1992 ء میں ٹاٹا ایوارڈ  ملا۔اور جلا وطنی اختیار کرنی پڑی ۔انہوں نے ضیاالحق کے مارشل لا کے دور کے خلاف نظمیں لکھیں جنہیں بہت شہرت ملی۔ احمد فراز نے 25 اگست 2008 کو و فا ت پائی۔