فراق گورکھپوری

فراق گورکھپوری اردو زبان کے مشہور شاعر۔ نقاد ۔ مترجم ہیں اصل نام رگھو پتی سہائے ۔ فراق گورکھپوری کی ولادت 28 اگست 1896ءکو گورکھپور میں ہوئی تھی جدید شاعری میں فراق کا مقام بہت بلند ہے۔ آج کی شاعری پر فراق کے اثر کو باآسانی محسوس کیا جاسکتا ہے۔آپ پی،سی،ایس اور آئی ،سی،ایس انڈین سول سروس کے لیے منتخب ہوئے تھے۔ لیکن گاندھی جی کی “تحریک عدم تعاون” کی مخالفت میں استعفی دے دیا۔ جس کی پاداش میں انھیں جیل جانا پڑا ۔اس کے بعد انہوں نے الہ باد یونیورسٹی میں انگریزی زبان کے لکچرر کے طور پر خدمات انجام دیں۔ یہیں پر انھوں نے بہت زیادہ اردو شاعری کی۔آپ کو ہندوستان کا اعلٰی معیار ادب جنپتھ ایوارڈ بھی ملا۔اور آپ آل انڈیا ریڈیو کے پروڈیوسر بھی رہے۔ طویل علالت کے بعد تین مارچ ۱۹۸۲ میں آپ کا انتقال ہوا۔ بطور ممتاز شاعر آپ نے اردو شاعری کی سبھی اصناف ، غزل ، نظم ، رباعی ، اور قطعہ میں شاعری کی وہ ایک منفرد شاعر ہیں ۔ اور ہندی ادبی اصناف پر متعدد کتب تحریر کیں۔ اور ساتھ ہی ساتھ انگریزی ادبی وثقافتی موضوعات پر چار کتابیں لکھیں۔ ان کی وفات تین مارچ سنہ 1982ء کو دہلی میں ہوئی۔